اشتہار

تازہ ترین

Post Top Ad

منگل، 16 جولائی، 2019

سوات میں والد کی جرم میں بیٹی کو سزا ، جرگہ اراکین گرفتار



سوات کے علاقے چارباغ میں 13سالہ بچی کو سورہ کی بھینٹ چڑھا دیا گیا،بچی کے والد کو بھی جسمانی طور پر معذور لڑکی نکاح میں دیدیا گیا،چارباغ پولیس نے نکاح خواں سمیت 13افراد کو گرفتار کرلیا،پولیس ترجمان کے مطابق چارباغ پولیس نے ڈی پی او سوات اشفاق انور کی ہدایت پر ڈی ایس پی سرکل خوازہ خیلہ دیدارغنی باچا،ایس ایچ او چارباغ بختی اللہ اور انوسٹی گیشن آفیسر روشنع علی نے پولیس نفری کے ہمراہ تحصیل چارباغ کے نواحی علاقے کنڈؤ میں کارروائی کی جہاں پر فریقین اور علاقہ مشران نے تیرہ سالہ بچی شازمہ دختر شیرذادہ کو سورہ قراردیکر تیئس سالہ لڑکے نظارعلی ولد دلاور کے نکاح میں دیدیا،پولیس نے نکاح خواں مولوی محمد عثمان ولد گل محمد سمیت لڑکے باپ دلاور خان،داداحضرت امین اور لڑکی کے والد شیرذادہ ولد سید کریم سمیت دیگر افراد بہادرخان ولد عمرخان،بہاؤ الدین ولد عبداللہ،شاہ زمین اور بخت زمین پسران عظیم،حضرت علی ولد عبداللہ،جنت گل ولد عبداللہ،امین ولد عبداللہ،نعمت خان ولد سرزمین خان کو گرفتار کرکے ان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے،پولیس کے مطابق متاثرہ بچی کے والد شیرذادہ کے اس کی معذورجواں سال لڑکی مسماۃ (و)دختر حضرت امین کے ساتھ مبینہ تعلقات ہونے پر اسے بھی شیرذاد ہ کے نکاح میں دیدیا گیا ہے جبکہ باپ کے جرم کی سزااس کی بیٹی کو دیکر سورہ میں دیدیاگیا لیکن پولیس نے اس فرسودہ رسم کو ناکام بناتے ہوئے ملزمان کو دھرلیا ہے اور مزید تفتیش جار ہے




کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Top Ad

صفحات